Jab Samat Teri Awaz Talak Jati Hai

جب سماعت تری آواز تلک جاتی ہے

جب سماعت تری آواز تلک جاتی ہے

جانے کیوں پاؤں کی زنجیر چھنک جاتی ہے

پھر اسی غار کے اسرار مجھے کھینچتے ہیں

جس طرف شام کی سنسان سڑک جاتی ہے

جانے کس قریۂ امکاں سے وہ لفظ آتا ہے

جس کی خوشبو سے ہر اک سطر مہک جاتی ہے

مو قلم خوں میں ڈبوتا ہے مصور شاید

آنکھ کی پتلی سے تصویر چپک جاتی ہے

داستانوں کے زمانوں کی خبر ملتی ہے

آئینے میں وہ پری جب بھی جھلک جاتی ہے

خشک پتوں میں کسی یاد کا شعلہ ہے سعیدؔ

میں بجھاتا ہوں مگر آگ بھڑک جاتی ہے

سعید احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(462) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Saeed Ahmad, Jab Samat Teri Awaz Talak Jati Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Saeed Ahmad.