Shorash Waqt Hui Wat Ki Raftar Main Gum

شورش وقت ہوئی وقت کی رفتار میں گم

شورش وقت ہوئی وقت کی رفتار میں گم

دن گزرتے ہیں ترے خواب کے آثار میں گم

کیا عجب تھی وہ فضاؤں میں گھلی بوئے قدیم

شہر کا شہر ہوا وحشت اسرار میں گم

اس کہانی کا بھی عنوان کوئی حیرت حسن

آئینہ عکس میں عکس آئینہ بردار میں گم

دیکھ یہ آنکھ تری چھب سے ہوئی خاکستر

سن سماعت ہے تری نرمیٔ گفتار میں گم

جو ترے خطۂ بے آب کی خواہش نہ بنا

کلبلاتا ہے وہ دریا کسی کہسار میں گم

اب تمناؤں کے اثبات کا سہتے ہیں عذاب

ہم کہ رہتے تھے کبھی نشۂ انکار میں گم

کس طرح ان پہ خموشی کے معانی کھلتے

عمر بھر لوگ رہے لفظ کی تکرار میں گم

سعید احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(552) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Saeed Ahmad, Shorash Waqt Hui Wat Ki Raftar Main Gum in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Saeed Ahmad.