Aik Junoon Ki Khatir Sari Dunya Chor K Aaye Hain

ایک جنوں کی خاطر ساری دنیا چھوڑ کے آئے ہیں

ایک جنوں کی خاطر ساری دنیا چھوڑ کے آئے ہیں

تُو کیا جانے تیرے لئے ہم کیا کیا چھوڑ کے آئے ہیں

ہم یاروں کے یار، وہ جن کے دم سے شہر کی رونق تھی

اِک تیری محفل کی خاطر میلہ چھوڑ کے آئے ہیں

سارے خواب سراب کرے یا اب ہم کو سیراب کرے

ہم تیرے صحرا کے لئے سو دریا چھوڑ کے آئے ہیں

ہم سے زیادہ جانِ غزالاں قدر ہے کس کو وحشت کی

تیرے لئے ہم خود کو اکثر تنہا چھوڑ کے آئے ہیں

تُو بھی آوازوں کے کتنے مقتل کاٹ کے آئی ہے

ہم بھی رسوائی کا میلہ برپا چھوڑ کے آئے ہیں

کون لکیروں کے جنگل میں عمر گنوائے یار سعیدؔ

دل کی راہ پہ آنے والے رستہ چھوڑ کے آئے ہیں

سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(487) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Saeed Khan, Aik Junoon Ki Khatir Sari Dunya Chor K Aaye Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Saeed Khan.