Lage Bhi Dil Kissi Pehlu Magar Sakoon Bhi Na Ho

لگے بھی دل، کسی پہلو مگر سکوں بھی نہ ہو

لگے بھی دل، کسی پہلو مگر سکوں بھی نہ ہو

لہو میں اس قدر آمیزشِ جنوں بھی نہ ہو

کیا ہے جیسے محبت نے دربدر ہم کو

کوئی کسی کی طلب میں خراب یوں بھی نہ ہو

لہو رتوں میں کہاں سے میں فاختہ کیلئے

وہ شاخ لاؤں کہ جس پر لکیرِ خوں بھی نہ ہو

وہ زخم کیا جو کسی جاں کو روشنی بھی نہ دے

وہ رنج کیا جو روایئت گرِ جنوں بھی نہ ہو

وصال و ہجر کے نشّے بدل کے دیکھ لیا

قرار یوں بھی نہ آئے، قرار یوں بھی نہ ہو

سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(322) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Saeed Khan, Lage Bhi Dil Kissi Pehlu Magar Sakoon Bhi Na Ho in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Saeed Khan.