Kab Talak Bojh Yeh Wehshat Ka Sahara Jaey

کب تلک بوجھ یہ وحشت کا سہارا جائے

کب تلک بوجھ یہ وحشت کا سہارا جائے

اے خدا میرا مقدر بھی سنوارا جائے

پھر سے اک بار تسلی دلِ وحشی کو ملے

پھر سے اک بار ترا نام پکارا جائے

خواب زاروں میں کہیں نیند بھٹکتی نہ رہے

زرد آنکھوں میں کسی خواب کو مارا جائے

کس لیے یاد کا سامان یہیں رکھتا ہے

اس نے جانا ہے مرے دل سے تو سارا جائے

حسنِ تکمیل پہ جب ناز کرے آئینہ

کوزہ گر چاک سے تب مجھ کو اتارا جائے

اس سے پہلے کہ بدن پیاس کو اوڑھے خود پر

اک سمندر مرے آگے سے گزارا جائے

کس لیے رقص کرے بجھتے ہوئے دیپ کی لو

میری آنکھوں سے اگر دور ستارا جائے

کیسے منزل پہ کوئی پہنچے بتاؤ ساجد

کانپتے ہاتھوں سے جب چھوٹ کنارا جائے

ساجد محمود رانا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(658) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sajid Mahmood Rana, Kab Talak Bojh Yeh Wehshat Ka Sahara Jaey in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sajid Mahmood Rana.