Yeh Kam NahiN Hae Keh Shehr E Azab Se Nikla

یہ کم نہیں ہے کہ شہرِ عذاب سے نکلا

یہ کم نہیں ہے کہ شہرِ عذاب سے نکلا

میں خواب زارِ محبت کے خواب سے نکلا

ابھی تلک مری آنکھوں میں ہے چبھن اس کی

وہ ایک خار جو بکھرے گلاب سے نکلا

تو کیا یہ خیر بھی شر کی سی ایک صورت ہے

تو کیا گناہ بھی کارِ ثواب سے نکلا

پھر ایک بار مجھے یاد آ گیا بچپن

پھر ایک پھول پرانی کتاب سے نکلا

عجب نہیں کہ ستاروں کی آنکھ بھر آئے

غموں کا چاند اگر آب و تاب سے نکلا

ستم تو یہ ہے مجھے دیکھ کر سرِ مقتل

نہ ایک لفظ زبانِ جناب سے نکلا

ابھی تلک مرے سینے پہ بار ہے ساجد

وہ اک سوال جو اس کے جواب سے نکلا

ساجد محمود رانا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1154) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sajid Mahmood Rana, Yeh Kam NahiN Hae Keh Shehr E Azab Se Nikla in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sajid Mahmood Rana.