Jane Kiya Baat Thi

جانے کیا بات تھی

حجلہء دل میں بھڑکی ہوئی آگ تھی

درد کی آنچ سے جل رہا تھا

مرے خواب زاروں کا سارا جہاں

بے کلی کے شراروں سے اٹھتا دھؤاں

روح کی وادیوں میں اترتےسمے

کس قدر سرد تھا

ٹمٹماتی ہوئی آرزو کے دیے کا بدن زرد تھا

ہجر جوبن پہ تھا

کاسنی، چمپئی، سرخ رو، قرمزی

غم کے پھولوں پہ کیسی بہار آئی تھی

ان کی مدہوش کن سی مہک سے معطّر

مرے شوق کی ذات تھی

جانے کیا بات تھی

کتنی بے چین سی آج کی رات تھی

سلمان باسط

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(683) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Salman Basit, Jane Kiya Baat Thi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Islamic, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 27 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Islamic, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Salman Basit.