Ankh Hai Ik Katora Pani Ka

آنکھ ہے اک کٹورا پانی کا

آنکھ ہے اک کٹورا پانی کا

اور یہ حاصل ہے زندگانی کا

رائیگاں کر گیا مجھے آخر

خوف ایسا تھا رائیگانی کا

چل نکلتا ہے سلسلہ اکثر

خوش گمانی سے بد گمانی کا

درد بوتا ہوں زخم کھلتے ہیں

ہے بہت شوق باغ بانی کا

کیا ٹھکانہ غم و خوشی کا ہو

دل علاقہ ہے لا مکانی کا

جا کے دریا میں پھینک آیا ہوں

یہ کیا ہے تری نشانی کا

جس کا انجام ہی نہیں کوئی

میں ہوں کردار اس کہانی کا

مدعا نظم ہو نہیں پایا

شعر دھوکہ ہے ترجمانی کا

سلمان ثروت

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1068) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Salman Sarwat, Ankh Hai Ik Katora Pani Ka in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 14 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Salman Sarwat.