Dua Hai K Sada Beher Gham Ki Mooj Zero Bomb Rahe

دعا ہے کہ سدا بحر غم کی موج زیر و بم رہے

دعا ہے کہ سدا بحر غم کی موج زیر و بم رہے

اور سفینہٴ د ل پہ بھی سدا ان لہروں کا کرم رہے

لکھنے والے نے بھی کیا لکھاہے میرے نصیب میں

کہ ہر با ر ترے تیرو ں کا نشانہ ہم رہے

ترے وعدوں کے بدل جانے کا مجھے کوئی شکوہ نہیں

مگر کاش وہ برسوں پہلے کی تجھے یاد اپنی قسم رہے

میرے دل کو جلانے والے، میری آنکھ کو رلانے والے

یہ دعا کہ میری طرح تری آنکھ بھی نم رہے

خدا نہ کرے تُو بھول جائے ستم گری کا یہ ہنرکہیں

الہیٰ برسوں میرے دل کے گلشن میں آباد یہ غم رہے

دیدہٴ عروس شب نہ محروم ہو پائے دُر اشک سے

چمن خزاں بھی ویراں نہ ہو اور بلبل بھی خوش و خرم رہے

دیکھ کہیں داغ نہ لگ جائے ترے پیرہن سیمیں پر

سی لے تُو دامن اپنا کچھ تو تجھے اپنی عریانی کا بھرم رہے

نہ آہ و فغاں ہو ، خاموش سارا جہاں ہو

رک جائے تسلسل دنیا مگر ر واں ترا ستم رہے

وہ کلیاں اشک شبنم میں ڈوب کر نہا جا تی ہیں

پنکھڑیٴ گلاب مرجھا جائے مگر باقی اک قطرہٴ شبنم رہے

شورش میخانہ میں نہ شراب چھلکی نہ جام ٹوٹا

یہ دستور محفل نہیں کہ ہنگامہ بھی نہ ہو اور آباد تری بزم رہے

محفل ساقی میں آنکھیں جھکا لینا د ستور احترام نہیں

لازم ہے کہ ترے اطوار میں با قی یہ طور شرم رہے

اے آفاق تجھ سے بھی گر جاتاہے شعلہ میرے آشیاں پر

دستور عنایت کا تقاضا،مثل آفتاب ضیائے قمر بھی گرم رہے

ترے ایواں میں ترے انصاف کی شہرت سنی تھی

میری وفائیں بھی تر ے قانون میں میرے ظلم رہے

ترے عارض کی لالی بھی حسین تری ادائیں بھی حسین

یہ آئین حُسن ہے کہ ترے گیسووٴں میں باقی یہ خم رہے!

سردار زبیر احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(283) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sardar Zubair Ahmed, Dua Hai K Sada Beher Gham Ki Mooj Zero Bomb Rahe in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sardar Zubair Ahmed.