Kiyon Haram Kehte Ho Usse Ju Hai Halal

کیوں حرام کہتے ہو اسے جو ہے حلال

کیوں حرام کہتے ہو اسے جو ہے حلال

نقاب سے بھی نہ چُھپ سکا ترے چہرے کا ملال

پس پردہ کیا ہنگامہ پوشیدہ کر رکھا ہے

ظاہر کر رہی ہیں تری آنکھیں وہ حُسن و جمال

ترے گیسو، ترے عارض اور ترے یہ طراز

یہ سب قدرت کی صنا عی کا ہے حسیں کما ل

سو بار چھپایا ہے تم نے ہم سے جو راز

آخر اشک رواں کی گواہی دے گیا ترا رومال

اب اس عالم خفگی میں اک بار مسکرا بھی دو

ترے ساتھ مری طبیعت بھی ہو جائے گی بحال

ہم انتخاب غم و خوشی سخاوت سے کرتے ہیں

زندہ ہوں جب تلک خالی نہیں ہوتے، ترے چشم غرسبال

تر ا یوں بدل جانا تری وفا کی نمائش نہیں تو اور کیا ہے

ترے تیر چشم کا رُخ مری جانب ہونا آزمائش نہیں تو اور کیا ہے

فلسفہٴ عشق خد ا نہیں خدا سے جدا نہیں

ایسے ہی مرے غم مری روح سے جدا نہیں

سبھی نے منہ پھیر لیا سبھی نے دیوانہ سمجھ لیا

یہ حال تو کسی کی خاطر ہوا،وگرنہ یہ حالت سدا نہیں

میں تو اپنوں کی ہمدردی کا ٹھکرایا ہوا ہوں

میرے اپنوں کے سوا تو مرا کوئی اعداء نہیں

میں ترے ہجر کے غم میں غمگیں رہا عمر بھر

کوئی اور نظر کرم کیا اٹھاتا ،میں کسی اور کی صدا نہیں

تو مجھے شکوہٴ محفل نہ کر ،مجھے شکوہٴ رقص نہ کر

ترے رقص میں تو اب وہ پہلے سی کوئی ادا نہیں

تو وفا سے گھبراتا ہے ،جفا پہ اتراتا ہے

ہم نے کب تجھ سے کہا ، میری جاں ترے لیے فدا نہیں

اے ناداں اپنے حُسن کی پرستش کو اپنی بندگی نہ سمجھ

تُو مری ذوق نگاہ کا تر اشا ہوا صنم ہے ، میرا خدا نہیں!

سردار زبیر احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(353) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sardar Zubair Ahmed, Kiyon Haram Kehte Ho Usse Ju Hai Halal in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sardar Zubair Ahmed.