Aee Sar O Piddar Mere Pass Raho

اے سروِ پدر ،اے نخلِ رواں ،مرے پاس رہو

اے سروِ پدر ،اے نخلِ رواں ،مرے پاس رہو

اے نورِ نظر اے راحتِ جاں مرے پاس رہو

اے پارہ ئ دل ،اے روشنی و جانِ محفل

اے محورِ خوابِ ماہ وشاں مرے پاس رہو

پھر آج ہے روزِ سالگرہ اور ساتھ ہو تُم

تادیر کنارِ آبِ رواں مرے پاس رہو

جب طفل تھے تم مری انگلی تھام کے چلتے تھے

اب فضلِ خدا سے ہوکے جواں مرے پاس رہو

اب چاند بھی گھر میں اترا ہے اور تارے بھی

تم لے کر ساری کاہکشاں مرے پاس رہو

میں جوشِ طرب میں خود بھی اٹھائوں تیز قدم

تم نغمہ سرا و رقص کناں مرے پاس رہو

تم پاس ہو جب سے زیست کا مجھ پر بوجھ نہیں

لگتا ہی نہیں کچھ مجھ کو گراں ،مرے پاس رہو

کب سوچتی تھی یوں آن ملوں گی تم سے کبھی

قربت کے یہ دن تھے وہم و گماں،مرے پاس رہو

اک چھائوں سی مجھ پر چھائی ہے اس ہمراہی میں

اے نخلِ دعا،قربان ہو ماں مرے پاس رہو

شاہدہ حسن

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(408) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahida Hassan, Aee Sar O Piddar Mere Pass Raho in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social, Friendship, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Social, Friendship, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahida Hassan.