Khud App Apne Khoon Main Nahaya Nahi Jaye Ga

خود آپ اپنے خوں میں نہایا نہ جائے گا

خود آپ اپنے خوں میں نہایا نہ جائے گا

ان بستیوں کو ہم سے مٹایا نہ جائے گا

ہم اپنے سب قدیم حوالوں سے ہیں جُڑے

اپنی جڑوں کو ہم سے ہلایا نہ جائے گا

دل کی سلامتی کی بھی کوئی سبیل ہو

ہم سے فقط بدن کو بچایا نہ جائے گا

جس دل کو صرف حرفِ محبت ہی راس ہے

اُس دل میں نفرتوں کو بسایا نہ جائے گا

ہم جانتے ہیں جُرمِ ضعیفی کی ہے سزا

تاریخ کا عذاب اٹھایا نہ جائے گا

آنکھوں سے سُن سکو تو سُنو حالِ زندگی

یہ ماجرا زباں سے سنایا نہ جائے گا

جھیلے نہ مجھ سے جائیں گے اب شاعری کے دُکھ

بے حِس دلوں کو شعر سنایا نہ جائے گا

اب کربلائے عصر میں سجدے کا وقت ہے

کیسے کہیں کہ سر کو جھکایا نہ جائے گا

شاہدہ حسن

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1294) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahida Hassan, Khud App Apne Khoon Main Nahaya Nahi Jaye Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahida Hassan.