Mehsoor Tha

محصور تھا

بہت گڈمڈ تھے

روز و شب کے وہ سب تانے بانے اور

نہ میں مشاق تھا ایسا

کہ چادر کوئی بن لیتا

مگر محصور تھا

اور جانتا تھا یہ مشقت

کاٹنا قسمت میں آیا ہے

سو جیسے بن پڑا یہ کام بھی پورا کیا میں نے

پہ اب جب دیکھتا ہوں

اپنے روز و شب کا حاصل

یعنی وہ چادر

تو کہتا ہوں

کہ اے لوگو!

اسے ہم راہ میرے دفن کر دینا

کوئی پوچھے تو کہہ دینا

ارے چھوڑو چلو اک چائے پیتے ہیں

شہرام سرمدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(517) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahram Sarmadi, Mehsoor Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 48 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahram Sarmadi.