To Kahan Hai Tujh Se Ik Nisbat Thi Meri Zaat Ko

تو کہاں ہے تجھ سے اک نسبت تھی میری ذات کو

تو کہاں ہے تجھ سے اک نسبت تھی میری ذات کو

کب سے پلکوں پر اٹھائے پھر رہا ہوں رات کو

میرے حصے کی زمیں بنجر تھی میں واقف نہ تھا

بے سبب الزام میں دیتا رہا برسات کو

کیسی بستی تھی جہاں پر کوئی بھی ایسا نہ تھا

منکشف میں جس پہ کرتا اپنے دل کی بات کو

ساری دنیا کے مسائل یوں مجھے درپیش ہیں

تیرا غم کافی نہ ہو جیسے گزر اوقات کو

شہریار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(587) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahryar, To Kahan Hai Tujh Se Ik Nisbat Thi Meri Zaat Ko in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 150 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahryar.