Tujh Se Bichre Hain To Ab Kis Se Milati Hai Hamein

تجھ سے بچھڑے ہیں تو اب کس سے ملاتی ہے ہمیں

تجھ سے بچھڑے ہیں تو اب کس سے ملاتی ہے ہمیں

زندگی دیکھیے کیا رنگ دکھاتی ہے ہمیں

مرکز دیدہ و دل تیرا تصور تھا کبھی

آج اس بات پہ کتنی ہنسی آتی ہے ہمیں

پھر کہیں خواب و حقیقت کا تصادم ہوگا

پھر کوئی منزل بے نام بلاتی ہے ہمیں

دل میں وہ درد نہ آنکھوں میں وہ طغیانی ہے

جانے کس سمت یہ دنیا لیے جاتی ہے ہمیں

گردش وقت کا کتنا بڑا احساں ہے کہ آج

یہ زمیں چاند سے بہتر نظر آتی ہے ہمیں

شہریار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(614) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahryar, Tujh Se Bichre Hain To Ab Kis Se Milati Hai Hamein in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 150 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahryar.