Main Our Tu

میں اور تو

میں وہ جھوٹا ہوں

کہ اپنی شاعری میں آنسوؤں کا ذکر کرتا ہوں

مگر روتا نہیں

آسماں ٹوٹے

زمیں کانپے

خدائی مر مٹے

مجھ کو دکھ ہوتا ہے

میں وہ پتھر ہوں کہ جس میں کوئی چنگاری نہیں

وہ پیمبر ہوں کہ جس کے دل میں بیداری نہیں

تم مجھے اتنی حقارت سے نہ دیکھو

عین ممکن ہے کہ تم میرا ہیولیٰ دیکھ کر

غور سے پہچان کر

اپنی آنکھیں پھوڑ لو

اور میں خالی نگاہوں سے تمہیں تکتا رہوں

آگہی مجھ کو پیاری تھی

مگر اس کا مآل

زندگی بھر کا وبال

اب لیے پھرتا ہوں اپنے ذہن میں صدیوں کا بوجھ

کچھ اضافہ اس میں تم کر دو

کہ شاید کوئی تلخی ایسی باقی رہ گئی ہو

جس کو میں نے آج تک چکھا نہیں

شہزاد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1270) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahzad Ahmed, Main Our Tu in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahzad Ahmed.