Thora Sa Rang Raat Ke Chehray Pay Dal Do

تھوڑا سا رنگ رات کے چہرے پہ ڈال دو

تھوڑا سا رنگ رات کے چہرے پہ ڈال دو

کیا سوچتے ہو جام ہوا میں اچھال دو

سمجھے گا کون روح کی گہرائیوں کے راز

پوچھے کوئی تو باتوں ہی باتوں میں ٹال دو

سورج ہے اور پیاس کے مارے ہوئے ہیں لوگ

ساری خدائی برف کے پانی میں ڈال دو

زنداں میں کس لیے مجھے کرتے ہو تم اسیر

دیوانہ ہوں تو شہر سے باہر نکال دو

سائے کے پیچھے بھاگتے پھرنے سے فائدہ

ہر آرزو کو جسم کے پیکر میں ڈھال دو

ویسے یہ تیرگی بھی بری چیز تو نہیں

لیکن کبھی تو آ کے دلوں کو اجال دو

شہزادؔ دوستی میں بھلا کیا ملا تمہیں

ہو اہل دل تو دل کا جنازہ نکال دو

شہزاد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1458) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahzad Ahmed, Thora Sa Rang Raat Ke Chehray Pay Dal Do in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahzad Ahmed.