Daimi Sukh

دائمی سکھ

محبت دائمی سکھ ہے

کہ جس کو موت کی گھڑیاں

کبھی کم کر نہیں سکتیں

یہ موسم اک دفعہ آئے

تو پھر آ کر ٹھہر جائے

حسیں شاداب سی کلیاں

نگاہوں میں سما جائیں

تو پھر یہ مر نہیں سکتیں

خیالوں کی روانی میں

کہ جیسے بہتے پانی میں

کنول کھل جائیں خوابوں کے

تو قدرت مسکراتی ہے

اشارہ کر کے تاروں سے

چھلکتے آبشاروں سے

مدھر سرگوشیاں کر کے

ہمیں رستہ دکھاتی ہے

یہ رستہ کس قدر حیران کن منزل دکھاتا ہے

اسی رستہ پہ انساں خود کو پہلی بار پاتا ہے

محبت کو سزا کہنے سے پہلے سوچ کر رکھنا

کہ جو اس سے بچھڑ جائے اسے منزل نہیں ملتی

بکھر جائیں جو بن کر خاک پھر محفل نہیں ملتی

محبت دائمی سکھ ہے

یہ سکھ میں چاہتی ہوں تیری آنکھوں میں نظر آئے

کہ تو اس کائنات خواب کا ہم راز بن جائے

محبت دائمی سکھ ہے

شائستہ مفتی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(635) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shaista Mufti, Daimi Sukh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 14 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shaista Mufti.