Apne Jab Ho Jayeen Paraye Phir Pochoon

اپنے جب ہو جائیں پرائے، پھر پوچھوں

اپنے جب ہو جائیں پرائے، پھر پوچھوں

کس نے کتنے رنج اٹھائے، پھر پوچھوں

کیسا لگتا ہے پلکوں پر بارِ خواب

جب تو آنکھ میں نیر چھپائے پھر پوچھوں

میں تو بکھری یادوں کے سنگ زندہ ہوں

تو بھی مجھ کو بھول نہ پائے، پھر پوچھوں

تیرے شعور کی پگڈنڈی بھی ویراں ہو

تو بھی خود کو یاد نہ آئے پھر پوچھوں

اپنے آپ سے باتیں کرنا آساں ہے ؟

جب تو اپنے آپ میں آئے پھر پوچھوں

جس مٹی میں پھول وصال، کے کھلنے ہوں

اس میں کوئی ہجر اگائے پھر پوچھوں

ابھی تو احساس کا موسم یخ بستہ

سانسوں میں جب آگ لگائے پھر پوچھوں

شائستہ سحر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1023) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shaista Sehar, Apne Jab Ho Jayeen Paraye Phir Pochoon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shaista Sehar.