Halat E Dil Ka Pochte Kiya Ho

حالتِ دل کا پوچھتے کیا ہو

حالتِ دل کا پوچھتے کیا ہو

یاد اتنا ہے بس، محبت کی

اِس قیامت کی خیر ہو صاحب

بات نکلی ہے اُس قیامت کی

ایک روزن ہے سانس لینے کو

یعنی مقدور بھر رعایت کی

آپ تبدیل کر نہیں، پائے

میری فطرت میں تھی محبت، کی

پھر بھٹکنے لگا وجود میرا

پھر ترے درد نے اعانت کی

خود سے بدلے لئے ہیں گن گن کے

عمر بھر خود ہی سے عداوت کی

تجھ سے نفرت جو کی ہے پہلی بار

ایسا لگتا ہے خود سے نفرت کی

تیرے پہلو سے کیا میں اٹھ جاؤں؟

کیا اجازت ہے مجھ کو ہجرت کی؟

مجھ کو دیکھے بنا ہی ٹوٹ گیا

آئینے، حسن سے بغاوت کی ؟

شام ہجرت میں کاٹنے والا

بات کرتا ہے صبحِ وصلت کی

شائستہ سحر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1421) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shaista Sehar, Halat E Dil Ka Pochte Kiya Ho in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shaista Sehar.