Tum Shujaiat Ke Kahan Qissay Sunanay Lag Gaye

تم شجاعت کے کہاں قصے سنانے لگ گئے

تم شجاعت کے کہاں قصے سنانے لگ گئے

جیتنے آئے تھے جو دنیا ٹھکانے لگ گئے

اڑ رہی ہے شہر کے سارے گلی کوچوں میں خاک

جتنے عاشق تھے وہ سب کھانے کمانے لگ گئے

رینگتی کاریں ابلتی بھیڑ بے بس راستے

کل مجھے گھر تک پہنچنے میں زمانے لگ گئے

اس نے ہم پر اک محبت کی نظر کیا ڈال دی

ہاتھ جیسے ہم غریبوں کے خزانے لگ گئے

عمر بھر کرتے رہے ہم ایک کوچے کا طواف

ایک سائے کے تعاقب میں زمانے لگ گئے

زندگی دینے لگی پرہیزگاری کا سبق

اب تو ہم جیسے بھی سبزی دال کھانے لگ گئے

شکیل جمالی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(371) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shakeel Jamali, Tum Shujaiat Ke Kahan Qissay Sunanay Lag Gaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 38 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shakeel Jamali.