Tota Hua Qalam

ٹوٹا ہوا قلم

ذرا اذنِ رہائی دو

کہ روحیں آرزووٴں کی

سنہری قید سے نکلیں

سفر آسان ہوجائے

محبت… بادبانی کشتیوں کے سنگ

سمندر کھوجنے نکلے،

ہوا…جنگل کی ویرانی میں،

بے سمتی سے چلتی

ٹھوکریں کھاتی خوشی کو

گود میں بھرلے …

کہ جیون بدوضع ٹوٹے کھلونے

پر توجہ سے زیادہ

کچھ نہیں…شاید…

مگر دل…کس کی مٹھی میں کسا ہے؟

کہ میری سب وریدیں جسم کی بے حد اکیلی

خانقاہ کی راہداری میں

بھٹکتی پھر رہی ہیں

(مگر دل …کس کی مٹھی میں کَسا ہے)

شناسائی…شروع دن سے

سرِ بازار واویلے کی زد میں تھی،

تماشا دیکھنے والے

سبھی چہروں، سبھی آنکھوں میں

دُکھ کی کوئلیں سی کوکتی ہیں،

آج…پھر وحشت

بھری محفل میں ننگے سرچلی آئی،

مجھے بھی رقص کرنا ہے،

مجھے بھی غم منانا ہے

… ذرا اذنِ رہائی دو

مجھے… خوشبو بھرے، رنگوں بھرے لفظوں بھرے

میلے میں جانا ہے…! !

شبہ طراز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(393) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sheba Taraz, Tota Hua Qalam in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 161 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sheba Taraz.