Iss Ka Sadma Nahi Hum Ujrain K Nashaad Raheen

اس کا صدمہ نہیں، ہم اجڑیں کہ ناشاد رہیں

اس کا صدمہ نہیں، ہم اجڑیں کہ ناشاد رہیں

نس یہ حسرت ہے کہ وہ خوش رہیں آباد رہیں

اپنے ہاتھوں سے کیا اپنی تمنّاؤں کا خوں

کیا کسی سے کہیں، کیوں مائلِ فریاد رہیں

تم پر بربادءِ دل کا نہیں کوئی الزام !

اپنی تقدیر میں لکھا تھا کہ برباد رہیں

چُھوٹ کے ہم سے مبارک اُنہیں لاکھوں خوشیاں

ہاں مگر ایک تمنا ہے کہ ہم یاد رہیں

میرے دل میں ابھی کچھ اور سکوں باقی ہے

آپ کچھ اور ابھی خوگرِبیداد رہیں

اپنا دل جب ہے غنی دولتِ خود داری سے

پھر کسی اور سے کیوں طالبِ امداد رہیں

حاصلِ زیست ہیں بس ضبط و وفا اے عالم

اپنے افسانے کے دو لفظ یہ بنیاد رہیں

سید عالم واسطی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(475) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Alam Wasti, Iss Ka Sadma Nahi Hum Ujrain K Nashaad Raheen in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Alam Wasti.