Ranj O Gham Apnaye Dard E Hijar Se Basal Hua

رنج و غم اپنائے، دردِ ہجر سے بسل ہُوا

رنج و غم اپنائے، دردِ ہجر سے بسل ہُوا

منزلیں طے اتنی کر لیں جب کہیں دل، دل ہُوا

زیست کی راہوں میں ہر اہلِ خرد کے واسطے

ہر قدم اہل جنوں کا رہبرِ منزل ہُوا

کیا ڈبو سکتا تھا طوفانِ قیامت خیز اسے

دامنِہر موج جسکو، دامنِ ساحل ہُوا

خاک دل میں اڑ رہی ہے، اشک آنکھوں سے رواں

"اس جہاں کے خشک و ترسے یہ مجھے حاصل ہُوا"

غم نہیں اسکا، سوا اس سے مجھے کہتے مگر

رنگ اس کا ہے یہ قصہ برسرِ محفل ہُوا

شمع و پروانہ، گل و بلبل فسانے بن گئے

نام میرا جب کسی کے نام میں شامل ہُوا

نذر جاں کرنا ہے اے عالم تو ہاں سر کو جُھکا

نذر جاں سے فائدہ، نادم اگر قاتل ہُوا

سید عالم واسطی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(454) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Alam Wasti, Ranj O Gham Apnaye Dard E Hijar Se Basal Hua in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Alam Wasti.