Waan Hansi Lab Per Machaal Kar Reh Gayi

واں ہنسی لب پر مچل کر رہ گئی

واں ہنسی لب پر مچل کر رہ گئی

اور یہاں دُنیا بدل کر رہ گئی

سوزِ غم، سوزِ الم، سوزِ فراق

کھیتی ارمانوں کی جل کر رہ گئی

ہائے وہ جوشِ جوانی، وہ تڑپ،

"اک ہوا کی رو تھی چل کر رہ گئی"

زندگی میں یوں ہوئیں تبدیلیاں

اپنی صُورت ہی بدل کر رہ گئی

حالتِ بیمار تمکو دیکھ کر!

اک ذرا سنبھلی، سنبھل کر رہ گئی

مرنے والا اتنا ہی بس کہہ سکا

"ہائے" اک مُنھ سے نکل کر رہ گئی

خوبءِ قسمت سے عالم ہر خوشی

رنج کے سانچے میں ڈھل کر رہ گئی

سید عالم واسطی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(538) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Alam Wasti, Waan Hansi Lab Per Machaal Kar Reh Gayi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Alam Wasti.