Dakh Qandil Rukh Yaar Ki Janib Mat Dekh

دیکھ قندیل رخ یار کی جانب مت دیکھ

دیکھ قندیل رخ یار کی جانب مت دیکھ

تیز تلوار ہے تلوار کی جانب مت دیکھ

بول کتنی ہے ترے سامنے قیمت میری

چھوڑ بازار کو بازار کی جانب مت دیکھ

دیکھنا ہے تو مجھے دیکھ کہ میں کیسا ہوں

میرے اجڑے ہوئے گھر بار کی جانب مت دیکھ

اور بڑھ جائے گی تنہائی تجھے کیا معلوم

ایسی تنہائی میں دیوار کی جانب مت دیکھ

آگے نکلا ہے تو پھر آگے نکلتا چلا جا

پیچھے ہٹتے ہوئے سالار کی جانب مت دیکھ

تو مرے سامنے آیا ہے تو پھر دیکھ مجھے

میری ٹوٹی ہوئی تلوار کی جانب مت دیکھ

تو کہانی کے بدلتے ہوئے منظر کو سمجھ

خون روتے ہوئے کردار کی جانب مت دیکھ

تیرا دل ہی نہ کہیں کاٹ کے رکھ دے اظہرؔ

آنکھ سے گرتی ہوئی دھار کی جانب مت دیکھ

اظہر عباس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(586) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Azhar Abbas, Dakh Qandil Rukh Yaar Ki Janib Mat Dekh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Azhar Abbas.