Hawaye Taiz Ke Agay Kahan Rahay Ga Koi

ہوائے تیز کے آگے کہاں رہے گا کوئی

ہوائے تیز کے آگے کہاں رہے گا کوئی

دیے پہ وقت سدا مہرباں رہے گا کوئی

اے دوست ہم بھی زمیں پر دھوئیں کی صورت ہیں

فضا میں کتنا دھواں ہے دھواں رہے گا کوئی

عجیب نقش بنائے ہیں وحشت دل نے

مگر یہ ریت ہے اس پر نشاں رہے گا کوئی

مکان دل کی سبھی رونقیں مکینوں سے

مکین ہی نہ رہے تو مکاں رہے گا کوئی

سراغ لائے گی کتنے نئے جہانوں کا

یہ آگہی کا سفر رائیگاں رہے گا کوئی

جو دل کی جھیل ہی جذبوں سے ہو گئی خالی

تو اپنی آنکھ میں آب رواں رہے گا کوئی

ہم اپنے ساتھ ہی لے جائیں گے جہاں اپنا

ہمارے بعد تو یونہی جہاں رہے گا کوئی

اظہر عباس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(572) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Azhar Abbas, Hawaye Taiz Ke Agay Kahan Rahay Ga Koi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Azhar Abbas.