Dekh Is Ko Khawab Mein Jab Aankh Khil Jati Hai Subah

دیکھ اس کو خواب میں جب آنکھ کھل جاتی ہے صبح

دیکھ اس کو خواب میں جب آنکھ کھل جاتی ہے صبح

کیا کہوں میں کیا قیامت مجھ پہ تب لاتی ہے صبح

شمع جب مجلس سے مہروؤں کی لیتی ہے اٹھا

کیا کہوں کیا کیا سنیں اس وقت دکھلاتی ہے صبح

جس کا گورا رنگ ہو وہ رات کو کھلتا ہے خوب

روشنائی شمع کی پھیکی نظر آتی ہے صبح

پاس تو سوتا ہے چنچل پر گلے لگتا نہیں

منتیں کرتے ہی ساری رات ہو جاتی ہے صبح

نیند سے اٹھتا ہے تاباںؔ جب مرا خورشید رو

دیکھ اس کے منہ کے تئیں شرما کے چھپ جاتی ہے صبح

تاباں عبد الحی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(510) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of TABAN ABDUL HAI, Dekh Is Ko Khawab Mein Jab Aankh Khil Jati Hai Subah in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 27 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of TABAN ABDUL HAI.