Jalu Main Liye Aik Ghubar E Aziyat

جلو میں لیئے اک غبارِ اذیت

جلو میں لیئے اک غبارِ اذیت

چلی میں سرِ رہگزارِ اذیت

میں چلتی گئی خود بخود سمت اس کی

عجب پر کشش تھی پکارِ اذیت

اٹھا کر خوشی سے ۔ پڑھا میں نے کلمہ

رکھا دوش پر ایسے بارِ اذیت

جگر کی زمیں روندی چشم _ زدن میں

بھلا ہو ترا شہ سوارِ اذیت

بہم ہے اب آسودگی کب دلوں کو

فقط درمیا ں ہے ہمارے اذیت

مری تشنہ کامی کی سن لی خدا نے

مجھے مل گئی آ بشارِ اذیت

سفر دشت _ غم کا مزہ تب ہی دیگا

چبھیں گے جو پیروں میں خارِ اذیت

کئی دن تلک ہوش آیا نہ مجھ کو

بہت بڑھ گیا تھا فشارِ اذیت

بچھڑنا بھی تم سے کب آساں تھا ہم پے

مگر اب ھے ملنا بھی کارِ اذیت

تکان عمر بھر کی لگے خواب مجھ کو

بدن پر یو ں چھایا خمارِ اذیت

میں جب تھک گئی نیند نے آ دبو چا

کہا ں تک میں کرتی شمارِ اذیت

کسی بھی خوشی کو اماں مل نہ پائی

لہو رنگ تھا کار زارِ اذیت

الاؤ بھی حیرت زدہ تھا الم کا

بکھیرے جو میں نے شرارِ اذیت

قبائے جنوں کی مرمت کی خاطر

پرویا ھے سوئی میں تارِ اذیت

نشاں مل گئے منزلوں کے تبسم

نظر آگئے ہیں منارِ اذیت

تبسم انوار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(469) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Tabassum Anwaar, Jalu Main Liye Aik Ghubar E Aziyat in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Tabassum Anwaar.