Kissi Ka Hajar Manane Ka Ehtamam Kareen

کسی کا ہجر منانے کا اہتمام کریں

کسی کا ہجر منانے کا اہتمام کریں

سو تخلیئے کا ۔ اداسی کا انتظام کریں

لو خم کیا مرے احساس نے سر _ تسلیم

سو آپ لفظوں کی شمشیر بے نیام کریں

یہ دل بھی آپکا ۔ حاضر ہیں میری آنکھیں بھی

حضور اسطرح خود کو نہ صرف _ جام کریں

خدائے عشق کا منصب کیا تجھ سے سنبھلے گا؟

جو تیری بندگی ہم خود پہ التزام کریں

نمک چھڑکنے کا زخموں پہ اب ہو اذن ہمیں

دیار _ درد میں ہم بھی تو دھوم دھام کریں

شب _ امید پھر عنوان رت جگے کا بنے

کہ میرے شہر میں جس دن بھی وہ قیام کریں

مسام سارے بدن کے گلاب بن کے کھلیں

جو صحن _ دل میں وہ بن کےصبا خرام کریں

ہمارے شہر کے لو گوں میں خاص بات یہ ہے

دلوں میں کینہ رکھیں منہ پہ احترام کریں

امید و بیم کے جو درمیاں معلق ہے

اس آرزو کا چلو کام اب تمام کریں

کسی کی یاد سے دامن چھڑا کے تھوڑی دیر

تبسم اٹھیں ۔ ذرا گھر کے کام وام کریں

تبسم انوار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(888) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Tabassum Anwaar, Kissi Ka Hajar Manane Ka Ehtamam Kareen in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Tabassum Anwaar.