Kissi Ko Hajat E Dastak Nahi Hai

کسی کو حاجت _ دستک نہیں ھے

کسی کو حاجت _ دستک نہیں ھے

جنوں کے شہر میں پھاٹک نہیں ھے

خسارے میں دکاں داری ھے میری

یہاں غم کا کوئ گاہک نہیں ھے

یوں دونوں بے وفائی کر رہے ہیں

مگر اک دوسرے پر شک نہیں ھے

نہ جانے کیسی موت آئی ھے دل کو

دھڑکتا ہے مگر دھک دھک نہیں ھے

کھلا ہم پر یہ آدھے راستے میں

پہنچتی راہ یہ تم تک نہیں ھے

بہت خوش ہوں میں اپنے سے بچھڑ کر

کہ اب ہمزاد کی بک بک نہیں ھے

مرے در پر کسی کی بد دعا سے

ہواؤں تک کی بھی دستک نہیں ھے

وہا ں منزل نہیں پاتی مسافت

جہاں پر جستجو ان تھک نہیں ھے

نشیتیں شعر کی عنقا تبسم

سخن کی بھی کوئ بیٹھک نہیں ھے

تبسم انوار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(218) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Tabassum Anwaar, Kissi Ko Hajat E Dastak Nahi Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Tabassum Anwaar.