Guzarnay Walay Andheray Mein Bhi Guzr Jatay

گزرنے والے اندھیرے میں بھی گزرجاتے

گزرنے والے اندھیرے میں بھی گزرجاتے

سڑک کنارے لگا قمقمہ بجھا رہتا

ہوا تو سامنے سے ناچتی گزر جاتی

اور اک زمیں سے بندھا پیڑ دیکھتا رہتا

میں روز اپنے گلے چاند سے کیا کرتا

مگر ہمیشہ وہ انجان سا بنا رہتا

میں بیچ شب میں اسے روز ڈھونڈتا تھا مگر

وہ میرا مہر کہیں اور ہی جلا رہتا

تمام رات میں ماضی کی فلم دیکھتا تھا

بس اپنے کمرے کی دیوار تاکتا رہتا

عبیدالرحمٰن نیازی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(777) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ubaid Ur Rehman Niazi, Guzarnay Walay Andheray Mein Bhi Guzr Jatay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ubaid Ur Rehman Niazi.