Guzishta Shaab Yun Laga K Andar Se Kat Raha HooN

گزشتہ شب ۔۔۔ یوں لگا کہ اندر سے کٹ رہا ہوں

گزشتہ شب ۔۔۔ یوں لگا کہ اندر سے کٹ رہا ہوں

میں اِس اذیّت میں ' ساٹھ پینسٹھ مِنٹ رہا ہوں

تو مجھ کو رونے دے یار! شانے پہ ہاتھ مت رکھ

میں گیلے کاغذ کی طرح چُھونے سے پَھٹ رہا ہوں

یقین کر ۔۔ سخت' سرد ' بےجان آدمی تھا

گلے مِلا تو لگا ستوں سے لِپٹ رہا ہوں

وہ ہجر تھا ' جس نے نم کیا اور بَل نکالے

میں جتنا سیدھا ہوں' اِس کا بالکل الٹ رہا ہوں

سنا تھا : ہر ایک شے حرارت سے پھیلتی ہے

تجھ آگ کے پاس ہو کے میں کیوں سمٹ رہا ہوں؟

پڑوس میں پیڑ کٹ رہا ہے' میں کان ڈھانپے

درخت کے فائدوں پہ مضمون رٹ رہا ہوں

اخیر ۔۔۔ بے کار شے تھا میں کارِ عشق سے قبل

سمجھ لے' سوکھے ہوئے کنویں کا رہَٹ رہا ہوں

عمیر نجمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(3018) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Umair Najmi, Guzishta Shaab Yun Laga K Andar Se Kat Raha HooN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Umair Najmi.