Jhuk K Chalta Hoon K Qad Uss K Barabar Na Lage

جُھک کے چلتا ہوں کہ قدّ اُس کے برابر نہ لگے

جُھک کے چلتا ہوں کہ قدّ اُس کے برابر نہ لگے

دوسرا یہ کہ اُسے راہ میں ٹھوکر نہ لگے

یہ ترے ساتھ تعلّق کا بڑا فائدہ ہے

آدمی ہو بھی تو اوقات سے باہر نہ لگے

نیم تاریک سا ماحول ہے درکار مجھے

ایسا ماحول جہاں آنکھ لگے ۔۔۔۔ ڈر نہ لگے

ماؤں نے چومنے ہوتے ہیں بریدہ سَر بھی

اُن سے کہنا کہ کوئی زخم جبیں پر نہ لگے

یہ طلب گار نگاہوں کے تقاضے ہر سُو

کوئی تو ایسی جگہ ہو جو ' مجھے گھر نہ لگے

یہ جو آئینہ ہے' دیکھوں تو خلا دِکھتا ہے

اِس جگہ کچھ بھی نہ لگواؤں تو بہتر نہ لگے؟

تم نے چھوڑا تو کسی اور سے ٹکراؤں گا مَیں

کیسے ممکن ہے کہ اندھے کا کہیں سَر نہ لگے

عمیر نجمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1720) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Umair Najmi, Jhuk K Chalta Hoon K Qad Uss K Barabar Na Lage in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Umair Najmi.