Daroon E Khawab Koi Shakal Muskurati Hai

درونِ خواب کوئی شکل مُسکراتی ہے

درونِ خواب کوئی شکل مُسکراتی ہے

میں چُپ رہوں تو مرے ساتھ گُنگناتی ہے

قضا سے الجھے ہوئے سوگوار ہاتھوں میں

ہمارے نام کی مہندی لگائی جاتی ہے

یہ رُخصتی کا سَمے بھی عَجب ہے آخرِ شَب

کہ چُوڑیوں کی کَھنک اور بڑھتی جاتی ہے

جمال اور کسی کا ہے میرے چہرے پر

بدن میں اور کوئی رُوح تلملاتی ہے

یہ رات سہمی سسکتی ہوئی دلہن کی طرح

لپٹتی جاتی ہے شرمندہ ہوتی جاتی ہے

اُسامہ خالد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(414) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Usama Khalid, Daroon E Khawab Koi Shakal Muskurati Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Usama Khalid.