Ghazal

غزل

جب سے اسے ہماری ضرورت نہیں رہی

اپنی بھی اس طرح کی طبیعت نہیں رہی

مدت ہوئی کسی نے ستایا نہیں ہمیں

ہم کو بھی شاعری کی وہ عادت نہیں رہی

تجھ کو بھی یاد رکھنا مناسب نہیں لگا

ہم کو بھی کاروبار سے فرصت نہیں رہی

اب دل سے تیری یاد کے ہیں سلسلے ہزار

اب دل کو تیری یاد سے وحشت نہیں رہی

نفرت کی تیز دھوپ نے گل کر دیے چراغ

اب سایہء دیوار کی حاجت نہیں رہی

میری قبر کو دیکھ کر بس اتنا کہہ سکے

"گویا کہ اب کلام کی حاجت نہیں رہی ".

عامر خلیل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(407) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Aamir Khalil , Ghazal in Urdu. Also there are 5 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aamir Khalil .