Tafakurat K Saaye Talay Aur Rooz O Shab

تفکرات کے سائے تلے اور روز و شب ہیں

تفکرات کے سائے تلے اور روز و شب ہیں

میری جفائوں کا خُمیازہ ہے اور روز و شب ہیں

ڈھونڈتی ہوں اپنے الفاظ تاقیامت ساتھ نبھانے کے

پیچھا کرتے ہیں خیالوں میں اور روز وشب ہیں

ہر طرف ہیں زر پرستوں کے سائے میری زندگی میں

خالی ہے میرا مقدر خوشیوں سے اور روز وشب ہیں

میں نے ہی اتار پھینکا تھا تیری وفائوں کا لبادہ

ہیں مقدر میں اماوس کی تاریکیاں اور روز وشب ہیں

بڑا زُعم تھا مجھے اپنی ہستی میں بسی فکر نوع پر

حقیقتوں سے ہوا زہن خالی اور روز وشب ہیں

تقدیر نے دکھایا مجھ کو اپنی قوت کا کرشمہ

ہر طرف ہیں بربادیوں کے قصے اور روز وشب ہیں

غافل ہوں اب بھی ایاز کی وفائوں کی قدرو قیمت سے

پیوستہ ہے احساس شرمندگی و ندامت اور روز و شب ہیں

ایاز خاں دہلوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(273) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Ayaz Khan Dehalvi, Tafakurat K Saaye Talay Aur Rooz O Shab in Urdu. Also there are 5 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ayaz Khan Dehalvi.