Abhi Ehsas Bhi Paida Hua He Apni Ulfat Ka

ابھی احساس ہی پیدا ہوا ہے اپنی الفت کا

ابھی احساس ہی پیدا ہوا ہے اپنی الفت کا

ابھی دل میں کوئی خاکہ انکی محبت کا

ابھی تک پردے پردے میں ہمارا ملنا جلنا ہے

ابھی دیکھا نہیں ہے حسن تک چہرے کی ندرت کا

وہ کالا برقعہ چہرے پہ جیسے چاند پر بادل

تمسخر کر رہا ہے حسن بھی پردہ کی ظلمت کا

ہر ایک شیء یوں زمین و آسماں میں محو حیرت ہے

کہ کیسا معجزہ اسمیں ہے پنہاں رب کی قدرت کا

وہ ان کے حسن لاثانی کا یارب شکریہ لیکن

مجھے ہر سو رلاتا ہے وہ غم عاشق کی کثرت کا

مہذب سی پری نازک کلی ہے وہ دل جاناں

تصادم دل میں رہتا ہے سدا الفت و عظمت کا

بتا تو فلسفہ ہے معجزہ ہے حور ہے کیا ہے

دعا ہے یا دوا ہے یا خلاصہ میری قسمت کا

میں پروانہ ہوں تو شمع میں بھنورا تو کلی سی ہے

مجھے پھر خوف کیوں ہو تو بتا تہمت پہ تہمت کا

الہی وہ مجھے دیدے یا اسکو دور ہی کردے

کہیں میرا فسانہ بن نہ جائے درس عبرت کا

میری یہ شاعری ان پر اور انکا مسکرا دینا

بہانہ بن نہ جائے یار یہ فیصل کی شہرت کا

فیصل انس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(718) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Faisal Anas, Abhi Ehsas Bhi Paida Hua He Apni Ulfat Ka in Urdu. Also there are 2 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faisal Anas.