Bujhay Sitaray Sahar Ki Naveed Hotay HaiN

بُجھے ستارے سحر کی نوید ہوتے ہیں

بُجھے ستارے سحر کی نوید ہوتے ہیں

کہ اِن کے تن سے اُجالے کشید ہوتے ہیں

ہر ایک دور میں ملتے نہیں حُسینؓ مگر

ہر ایک دور میں پیدا یزید ہوتے ہیں

سحر اندھیروں کو قیدی بنا کے رکھتی ہے

تو تیغِ شب سے اُجالے شہید ہوتے ہیں

سُنی سنائی ہر اِک بات بُھول جاتی ہے

مگر وہ حادثے جو چشم دید ہوتے ہیں

نہ کر یہ کارِ جراحت ہمارے زخموں پر

کُریدنے سے یہ گہرے مزید ہوتے ہیں

میں ٹُوٹ پُھوٹ کے بکھرا تو یہ کُھلا خالد

شکستِ ذات کے صدمے شدید ہوتے ہیں

خالد مصطفیِ

خالد مصطفی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(386) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Khalid Mustafa, Bujhay Sitaray Sahar Ki Naveed Hotay HaiN in Urdu. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khalid Mustafa.