Taraptey Deedar Ko Tary

تڑپتے دیدار کو تیرے

تڑپتے دیدار کو تیرے، پر محصور ہیں ہم

رسمِ دُنیا کی وجہ سے تھوڑے مجبور ہیں ہم

دل میں دھڑکن بھی تیرے نام سے دھڑکتی ہے

مگر نظروں سے تیری دُور، بہت دُور ہیں ہم

تیری لگن میں ہم سارے جہاں کو بھول گئے

لوگ سمجھنے لگے، بہت ہی مغرور ہیں ہم

اور لوگوں کی طرح ہم کو نہ سمجھنا کبھی

اور لوگوں سے اور، ۔۔۔ بہت اور ہیں ہم

مانو، ہم تو مُسکرانہ تلک بھول گئے

پھر بھی ہر اِک سے کہتے ، بہت مسرُور ہیں ہم

محمد عمران خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(536) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Muhammad Imran Khan, Taraptey Deedar Ko Tary in Urdu. Also there are 38 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Muhammad Imran Khan.