Ghazal

غزل

لوگوں کے درمیاں وہ اکیلا لگا مجھے

تاروں کے ساتھ چاند بھی تنہا لگا مجھے

خوں رنگ موسموں سے تھی نسبت عجیب سی

سایہ بھی اک چنار کا اچھا لگا مجھے

جس نے بلندیوں سے گرایا تھا وقتِ شام

دیکھا پلٹ کے اس کو تو اپنا لگا مجھے

جس کے مزاج میں سبھی رنگوں کا زھر تھا

وہ سانپ تو نہیں تھا پر ایسا لگا مجھے

لفظوں کے پیرھن پہ تھی خوشبو لگی ھوئی

اس کا ہر ایک لفظ ھی جھوٹا لگا مجھے

چاروں طرف مکاں کے تھا پانی رکا ھوا

بارش کے بعد شہر بھی دریا لگا مجھے

نیلما ناھید درانی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(272) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Neelma Naheed Durrani, Ghazal in Urdu. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Neelma Naheed Durrani.