Tum Bolo Kia Kerti Thi?

تم بولو کیا کرتی تھی؟

دردِ فراق کے سالوں میں

محبت کے ملالوں میں

خود سے باتیں کرتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

میں تو آہیں بھرتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

جب سورج شام کو ڈھلتا تھا ، میں ویرانوں میں نکل جاتا تھا

رو رو کے تری یادوں میں ، نصف شب میں لوٹ آتا تھا

میں تھوڑا تھوڑا مرتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

میں تو آہیں بھرتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

خاموشیوں کے پہن کے کپڑے ، میں اُکتایا ہوا رہتا تھا

بس کوئی نہ مجھ سے بات کرے ، سب سے میں یہ کہتا تھا

بے وجہ سب سے لڑتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

میں تو آہیں بھرتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

ساری ساری رات میری ، کروٹوں میں گزر جاتی تھی

نیند بھی اِک پل کو ہائے ! میری آنکھوں میں نہ آتی تھی

ہجراں میں سکون ہرتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

میں تو آہیں بھرتا تھا ، تم بولو کیا کرتی تھی؟

نہال عنائیت گل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(299) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of NEHAL INAYAT GILL, Tum Bolo Kia Kerti Thi? in Urdu. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of NEHAL INAYAT GILL.