Faisala

فیصلہ

اب طے ہے کہ دھاڑیں مار کے رویا جائے

چھوڑ پھول، آنگن میں کانٹوں کے سویا جائے

چاند راتوں کے خنک بھرے پہروں میں

گیلی پلکوں سے گاؤ تکیے کو اپنے بھگویا جائے

آنکھوں میں جھلمل کرتے ہوئے موتیوں سے

وقتِ سحر اب چہرے کو اپنے دھویا جائے

بے حس، بے نیاز ہو کر دنیا کی رنگینیوں سے

لمحات میں درد و کرب کے خود کو ڈبویا جائے

ضبط کی کربناک شدت سے تھک ہار کے

شکن زدہ بستر میں خود کو سمویا جائے

چھوڑ کر پرائی دنیا کے پرائے لوگوں کو پارسؔ

تیری یاد کے ہجوم میں خود کو کھویا جائے

پارس سہیل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(723) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Paaris Sohail, Faisala in Urdu. Also there are 5 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Paaris Sohail.