بند کریں
شاعری ثریا نصیبکوئی جو لکھتا ھے مُجھ کو خراب لکھنے دو
کوئی جو لکھتا ھے مُجھ کو خراب لکھنے دو
شاعر : ثریا نصیب
سوال وصل کا ہمکو جواب لکھنے دو
قلم نہ روکو ھمارا ، جواب لکھنے دو

وہ جس نے توڑ کے دل کو سکھا دیا جینا
کیا ھے اس نے کرم بے حساب لکھنے دو

گناہ عشق ھے ، ھُوا کرے یارو
تُم اس گناہ حسیں کو ثواب لکھنے دو

مرے حبیب! تمہیں میرے آنسوؤں کی قسم
کہ رَت جگوں کا بھی تھوڑا حساب لکھنے دو

تُمہارے ظُلموں کو ھم آیؑنہ دکھایؑں گے
فسانے ھو گےؑ کافی ، کتاب لکھنے دو

دلوں کا حال خدا ھی کو بس پتا ھے "نَصِیب"
کوئی جو لکھتا ھے مُجھ کو خراب لکھنے دو
ثریا نصیب © جملہ حقوق بحق ادارہ اُردو پوائنٹ محفوظ ہیں۔
© www.UrduPoint.com

(7) ووٹ وصول ہوئے