Kefiyat

خواب کس نے اٹھا لئے ہیں

نگاہ بنجر ہوئی ہے جانے یہ خواب کس نے اٹھا لئے ہیں

محبتوں کی کہانیوں سے گلاب کس نے اٹھا لئے ہیں

نہ اب وہ آہوں کا سلسلہ ہے، نہ اب وہ تلخی ہے رتجگوں میں

یہ ہجر آسان ہو گیا ہے، عذاب کس نے اٹھا لئے ہیں

سنا ہے کہ جام بچ گیا ہے، بھری ہوئی ہے ابھی صراحی

یہ میکدے سے ہم ایسے خانہ خراب کس نے اٹھا لئے ہیں

وہ جن کے باعث یہ لگ رہا تھا کہ منزلیں اختیار میں ہیں

کوئی بتائے کہ راستوں سے سراب کس نے اٹھا لئے ہیں

ذکی #دلِ مضطرب سے اپنے یہ درد لکھتے ہو کس لئے تم

تمہاری غزلوں سے چاند تاروں کے باب کس نے اٹھا لئے ہیں

ذیشان احمد ذکی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(446) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Zeeshan Ahmad Zaki, Kefiyat in Urdu. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Zeeshan Ahmad Zaki.