Main Apni Dastan-e-zindagi Suna Raha Tha

میں اپنی داستانِ زندگی سنا رہا تھا

میں اپنی داستانِ زندگی سُنا رہا تھا

تمہارے شہر کا ہر شخص بڑبڑا رہا تھا

میں پچھلے سال کئی سال بعد گزرا تو

وہ ایک راستہ کہ اب بھی مسکرا رہا تھا

میں کم سنی میں اسے کہہ نہیں سکا اور اب

میرا شعور ہی میرا گلا دبا رہا تھا

سنا ہے اک دفعہ وہ مجھ سے ملنے آیا تھا

میں اس کو اس کی ہی نشانیاں بتا رہا تھا

یہ پہلی بار ہے کہ زخم تلملا رہے تھے

یہ پہلی بار ہے کہ درد بلبلا رہا تھا

مقامِ ہجر تھا، ٹھہر ٹھہر کے پڑھنا تھا

یہیں تو داستاں کہنے کا لطف آ رہا تھا

ذکیؔ میں جانتا ہوں مری بینائی کیسے گئی

میں اس کو دُور تک جاتے بھی دیکھتا رہا تھا

ذیشان احمد ذکی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(315) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Zeeshan Ahmad Zaki, Main Apni Dastan-e-zindagi Suna Raha Tha in Urdu. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Zeeshan Ahmad Zaki.