Mujhay Jana Ho Ga

مجھے جانا ہو گا

طے ہی کب ہم نے کیا تھا کہ بھلانا ہو گا

تم نے بس اتنا کہا تھا "مجھے جانا ہوگا"

دل کو لگتا ہے ابھی کل کا ہی قصہ ہے یہ

لوگ کہتے ہیں کوئی پچھلا زمانہ ہو گا

اب بھی اُن گلیوں سے خوشبو تری آتی ہوگی

اب بھی اُس گھر میں ترا لمس توانا ہوگا

جی رہا ہوں حقیقت میں، مگر جانتا ہوں

حاصلِ زندگی صرف ایک فسانہ ہو گا

اُس کے چہرے پہ اذیت تو ابھی آئی ہے

حادثہ اب نہیں پیش آیا ، پرانا ہو گا

میں تو اُس روز غمِ ہجر مناؤں گا ذکیؔ

جب مرے خیال سے وہ شخص روانہ ہو گا

ذیشان احمد ذکی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(324) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Zeeshan Ahmad Zaki, Mujhay Jana Ho Ga in Urdu. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Zeeshan Ahmad Zaki.