Phool Se Masoom Bachon Ki Zuba Ho Jayen Ge

پھول سے معصوم بچوں کی زباں ہو جائیں گے

پھول سے معصوم بچوں کی زباں ہو جائیں گے

مٹ بھی جائیں گے تو ہم اک داستاں ہو جائیں گے

میں نے تیرے ساتھ جو لمحے گزارے تھے کبھی

آنے والے موسموں میں تتلیاں ہو جائیں گے

کیا خبر کس سمت میں پاگل ہوا لے جائے گی

جب پرانے کشتیوں کے بادباں ہو جائیں گے

تجھ کو شہرت کی طلب اونچا اڑا لے جائے گی

دور تجھ سے یہ زمین و آسماں ہو جائیں گے

یاد آئے گی انہیں کیا کیا ہماری بے حسی

جب ہمارے عہد کے بچے جواں ہو جائیں گے

میرے نغمے میری خاطر کچھ بھی ہوں والیؔ مگر

آگ برساتی رتوں میں بدلیاں ہو جائیں گے

والی آسی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(392) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of WALI AASI, Phool Se Masoom Bachon Ki Zuba Ho Jayen Ge in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of WALI AASI.