Arzo E Hayat

آرزوئے حیات

اے آرزوئے حیات

اب کی بار جان بھی چھوڑ

تجھے خبر ہی نہیں کیسے دن گزرتے ہیں

اے آرزوئے نفس

اب معاف کر مجھ کو

تجھے یہ علم نہیں کتنی مہنگی ہیں سانسیں

کہ تو تو لفظ ہے

بس ایک لفظ ادھ مردہ

ترے خمیر کی مٹی کا رنگ لال گلال

سلگتی آگ نے تجھ کو جنا ہے اور تو خود

اک ایسی بانجھ ہے جس سے کوئی امید نہیں

تو ایسا زہر ہے جو پی کے کوئی بھی انساں

خود اپنے آپ کو کوئی خدا سمجھتا ہے

تو اک شجر ہے جو بس دھوپ بانٹتا ہی رہے

تو اک سفر ہے جو صدیوں سے بڑھتا جاتا ہے

تو ایسا دم ہے جو مردوں کو زندہ کرتا ہے

تو وہ کرم ہے جو ہر اک کریم مانگتا ہے

تو وہ طلب ہے جسے خود خدا بھی پوجتے ہیں

تو وہ طرب ہے جسے خود خوشی بھی مانگتی ہے

تو مجھ کو جتنے بھی اب شوخ رنگ دکھلائے

تو چاہے زندگی کو میرے پاس لے آئے

وقار اب ترے قدموں میں گرنے والا نہیں

اے آرزوئے حیات

اب میں پہلے والا نہیں

وقار خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(880) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Waqar Khan, Arzo E Hayat in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Waqar Khan.