Ab Din Ki Baatain Kartay Hain

اب دن کی باتیں کرتے ہیں

لو رات کی بات تمام ہوئی

اب دن کی باتیں کرتے ہیں

سب خواب تماشے دھول ہوئے

اور جگنو تارے دیپ سبھی

پرکاش کے پھیلے ساگر میں

چمکاٹ دکھانا بھول گئے

اک چاند کہ شب بھر ساتھ رہا

وہ چاند بھی گر کر ٹوٹ گیا

لو رات کی بات تمام ہوئی

اب دن کی باتیں کرتے ہیں

پھولوں کے سوجے چہروں پر

شبنم کی چڑیاں اتری تھیں

ان چڑیوں پر ہم سورج کے

تیروں کا نشانہ تکتے ہیں

ادھ میچی اپنی پلکوں سے

ہم گلیوں اور بازاروں میں

سونے کے ریزے چنتے ہیں

اور داغوں دھبوں شکنوں سے

دیواریں کالی کرتے ہیں

پھر اجلے کاغذ پر لکھی

سب گندی خبریں پڑھتے ہیں

لو رات کی بات تمام ہوئی

اب دن کی باتیں کرتے ہیں

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(712) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Ab Din Ki Baatain Kartay Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.